سندھ ہائی کورٹ کا اعلان، ایم ڈی کیٹ کے نتائج میں تاخیر متوقع

سندھ ہائی کورٹ کا اعلان، ایم ڈی کیٹ کے نتائج میں تاخیر متوقع

سندھ ہائی کورٹ کا اعلان، ایم ڈی کیٹ کے نتائج میں تاخیر متوقع

پاکستان میڈیکل کمیشن (پی ایم سی) کو جمعرات کے روز سندھ ہائی کورٹ نے ایم ڈی کیٹ کے دونوں انٹری ٹیسٹ کے نتائج جاری کرنے کی ہدایت کی تھی۔

ایم ڈی کیٹ کا ایک ٹیسٹ ریگولر اسٹوڈنٹس کے لیے ہونا تھا جبکہ دوسرا کورونا وائرس سے متاثر طالب علموں کے لیے تھا اور یہ دونوں ٹیسٹ ایک ساتھ 29 نومبر کو منعقد ہوئے۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق یہ ہدایات جسٹس ندیم اختر کی سربراہی میں قائم ایس ایچ سی کے بینچ نے ایم ڈی کیٹ کو منسوخ کرنے کی درخواست پر اپنے تفصیلی فیصلے میں جاری کیں۔

مزید پڑھیں: صوبائی حکومت نے کالجز کے لئے 1900 نئی اسامیوں کی منظوری دے دی

 پی ایم سی کے نائب صدر بیرسٹر علی رضا نے اس سے قبل میڈیا کو بتایا تھا کہ 29 نومبر کو انٹری ٹیسٹ میں حصہ لینے والے طلباء کے نتائج کا اعلان 10 دن میں کیا جائے گا جبکہ ان امیدواروں کے لیے 13 دسمبر کو امتحان طے کیا گیا تھا جن کا کورونا وائرس کا ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔

اپنے فیصلے میں ایس ایچ سی نے ریمارکس دیئے کہ چونکہ پی ایم سی کی کونسل نے کورونا وائرس میں مبتلا طلباء کے لیے ایک علیحدہ ٹیسٹ کی منظوری دے دی ہے لہٰذا دو مختلف تاریخوں پر مضامین کے ٹیسٹ کروانا پی ایم سی ایکٹ کا غیر قانونی یا قوانین کے منافی اقدام نہیں سمجھا جا سکتا۔

عدالت نے ریمارکس دیئے کہ کوروناوائرس کے وبائی مرض کی وجہ سے رونما ہونے والی غیر معمولی اور خطرناک صورتحال کو نظرانداز نہیں کیا جاسکتا۔ اپنے فیصلے میں عدالت نے نوٹ کیا کہ پی ایم سی حقیقی دکھائی دیتی ہے اور وہ سب کے بہترین مفاد میں کام کررہی ہے۔ عدالت نے کہا کہ پی ایم سی کے ایسے غیر معمولی اقدامات ان غیر معمولی حالات میں جائز ہیں اگر وہ قانون کے منافی نہیں ہیں۔

مزید پڑھیں: جامعہ کراچی میں ویژول اسٹڈیز کا داخلہ ٹیسٹ 6 دسمبر کو ہوگا

عدالت نے مشاہدہ کیا کہ 29 نومبر تک پی ایم سی کے درخواست دہندگان کے لیے کورونا وائرس میں مبتلا افراد کے لیے الگ الگ ٹیسٹ لینے کے فیصلے کی درخواست دہندگان سمیت کسی بھی درخواست دہندگان کے کسی بنیادی حق کی خلاف ورزی نہیں ہوئی ہے اور فیصلہ پی ایم سی ایکٹ یا کسی اور قانون کی کسی بھی دفعہ کے منافی نہیں تھا۔ لیکن عدالت نے گورننگ باڈی کو ہدایت کی کہ وہ دونوں ٹیسٹوں کے نتائج ایک ہی دن جاری کریں اور ان ٹیسٹوں کے سلسلے میں ایک ہی میرٹ لسٹ تیار کریں۔

اس سے قبل اسی عدالت نے اپنے مختصر حکم کے ذریعے طلباء کے لیے داخلے کے دو الگ الگ ٹیسٹ منسوخ کرنے کی درخواست کو مسترد کردیا تھا۔

عدالت نے تمام طلبا کو بھی ہدایت کی تھی کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ حکومت کی جانب سے اعلان کردہ کورونا وائرس کے ایس او پیز پر سختی سے عمل کیا جائے۔

تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں ©️ 2021 کیمپس گرو

کیا آپ کے ذہن میں کوئی سوال ہے
ڈسکس کریں

× کلک کریں