نسٹ کے انجینئرنگ داخلہ ٹیسٹ کی تیاری کیسے کی جائے؟

نسٹ کے انجینئرنگ داخلہ ٹیسٹ کی تیاری کیسے کی جائے؟

نسٹ کے انجینئرنگ داخلہ ٹیسٹ کی تیاری کیسے کی جائے؟

نیشنل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی (NUST) پاکستان میں واقع ایک انتہائی معروف اور معتبر انجینئرنگ اور آئی ٹی انسٹی ٹیوٹس میں سے ایک ہے۔ ملک کے اس نامور ادارے میں انجینئرنگ پڑھنے کے لیے داخلہ لینے سے قبل انٹری ٹیسٹ پاس کرنا این ای ٹی سے مشروط ہے جو کہ نسٹ میں داخلے کی لازمی شرط ہے۔ انٹری ٹیسٹ کے لیے کٹ آف ویٹیج 75 فیصد ہے لہٰذا طلبہ کو نسٹ میں داخلہ حاصل کرنے کے لیے بھرپور تیاری اور سخت محنت کرنے کی ضرورت ہے۔

این ای ٹی ٹیسٹ ایک سال میں تین بار کیا جاتا ہے اور طلباء چاہیں تو تمام ٹیسٹ دے سکتے ہیں یا صرف ایک ٹیسٹ میں پاس ہونے سے بھی آپ کو نسٹ میں داخلہ مل سکتا ہے۔ نیٹ ٹیسٹ میں حصہ لینے والے طباء کے بہترین اسکور پر غور کیا جائے گا لہٰذا آپ کو پریشان ہونے کی ضرورت نہیں ہے۔ تاہم بہت سے طلبہ نیٹ ٹو کے لیے بھی حاضر ہوتے ہیں جس کی سفارش نہیں کی جاتی ہے کیونکہ اسی وقت جب آپ اپنے ایف ایس سی امتحانات کی تیاری بھی کر رہے ہوں گے۔ یہ ایف ایس سی اور این ای ٹی دونوں میں آپ کے لیے مایوسی کا باعث بن سکتا ہے لہذا ہمیشہ ذہانت سے کام کریں۔ طلباء کے لیے ٹیسٹ میں حاضر ہونے کے لیے تجویز کردہ ٹیسٹ نیٹ ون اور نیٹ ٹو ہیں اور اس میں بھی طریقہ یہ ہوتا ہے کہ نیٹ ون میں زیادہ تر سوالات ایف ایس سی پارٹ ون کے ہوتے ہیں جبکہ نیٹ ٹو کے لیے ایف ایس سی کے سوالات کا حصہ پہلے کی نسبت کم ہے جو آپ کے لیے بہتر اسکور کرنے میں آسان آپشن ثابت ہوگا۔

این ای ٹی کے بارے میں آپ کو کیا جاننے کی ضرورت ہے؟

 ین ای ٹی پاس کرنے کی کوشش کرنے کا آئیڈیا یہ ہے کہ آپ اسے کس قدر ذہانت اور حکمت عملی سے آزماتے ہیں۔ بہت سارے طلباء امتحان کے لیے سخت محنت سے تیاری کرتے ہیں تاہم پھر بھی وہ اسے پاس نہیں کر پاتے کیونکہ وہ اپنے وقت کو صحیح طور پر تقسیم نہیں کرتے ہیں۔ یعنی ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ وہ غلط راہ پر بھاگنے میں اپنی توانائی اور وقت صرف کررہے ہوتے ہیں جس کے باعث وہ این ای ٹی کے امتحانت میں کامیابی حاصل نہیں کر پاتے۔ کچھ طلباء کسی ایک سیکشن میں بہت زیادہ وقت ضائع کردیتے ہیں جس کی وجہ سے وہ دوسرے حصوں کو مطلوبہ وقت نہیں دے پاتے۔

اس لیے ہم آپ کے لیے تجویز کرتے ہیں کہ اس امتحان کی تیاری کرتے وقت "کوشش  کا منصوبہ" بنانے کے بارے میں سوچیں۔

کوشش کا یہ منصوبہ بناتے وقت خیال رہے کہ آپ کے اس منصوبے میں تمام عناصر شامل ہونے چاہئیں کہ آپ گھبرائیں نہیں، ہر حصے کو آزمانے کے لئے اپنا وقت کیسے تقسیم کریں اور آپ کو تمام حصوں کو ختم کرنے میں کتنا وقت درکار ہوگا؟

 یہ تفصیلی بلاگ آپ کو بتائے گا کہ آپ اپنے نیٹ کے امتحان کو کس طرح پاس کرسکتے ہیں۔
ایم سی کیوز کی تقسیم:
ریاضی: 80 ایم سی کیوز۔
فزکس: 60 ایم سی کیوز۔
کیمسٹری: 30 ایم سی کیوز۔
انگریزی: 20 ایم سی کیوز۔
ذہانت: 10۔ 

 اپنے فارمولوں کو ٹھیک سے سمجھیں۔

کیا طبیعیات (فزکس) کے مضمون میں آپ کے تصورات واضح ہیں؟

ایک چیز یقینی ہے کہ یہاں تک کہ اگر آپ طبیعیات یعنی فزکس کو پوری طرح سمجھنے کی صلاحیت نہیں رکھتے ہیں  لیکن آپ کے تصورات واضح ہیں تو آپ اس حصے میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتے ہیں۔ اس حصے میں زیادہ تر ایم سی کیوز فقط عددی مسائل ہیں اور کتابوں سے استفادہ کیے گئے تصورات قدرے کم ہیں۔ دوسرے حصوں کے مقابلے میں آپ کو کتاب اول اور کتاب دوم کے آخری ابواب میں سب سے زیادہ عددی سوالات ملیں گے۔ فارمولوں کو اچھی طرح یاد کرنے اور حل کرنے کے لیے آپ کو کتنی سخت محنت کرنے کی ضرورت ہے اس پر ہم اتنا زور نہیں دے سکتے ہیں کہ آپ کا دماغ بوجھل ہوجائے۔ تمام فارمولوں کو شیٹ پر لکھ کر ان پر نظر ثانی کرنا اور انھیں دوبارہ سے دہرانا طبیعیات کے حصے کی تیاری کرتے ہوئے ایک عمدہ عمل ہے جو آپ کے لیے بے حد فائدہ مند ثابت ہوگا۔

زیادہ جامع تفہیم حاصل کرنے کا دوسرا طریقہ یہ ہے کہ مختلف کتابوں سے اعدادوشمار پر مبنی سوالات کو حل کیا جائے۔ کلیدی کتب میں جوابات ڈھونڈنا یقیناً ایک اچھا خیال نہیں ہے۔

مشق "ریاضی" کو کامل بناتی ہے۔

انگریزی کا وہ مشہور مقولا تو آپ نے سنا ہوگا کہ پریکٹس میکس آ مین پرفیکٹ، یعنی مشق آدمی کو کامل بناتی ہے اسی طرح ہم کہہ سکتے ہیں کہ این ای ٹی میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے لیے آپ کی ریاضی کی مہارت اسی نقطہ نظر پر ہونی چاہیے اور آپ اس میں کاملیت صرف مشق اور مشق کرکے ہی حاصل کرسکتے ہیں۔

چونکہ ریاضی کا حصہ 80 نمبروں پر محیط ہے ، اس لیے بہت سارے طلباء کا یہ فیصلہ ہوتا ہے کہ آیا وہ امتحان میں کامیاب ہوسکیں گے یا نہیں۔ ہمارا مشورہ ہے کہ آپ پرسکون رہیں اور مقررہ وقت کا 30 سے ​​40 فیصد حصہ ریاضی کے خانے میں صرف کریں۔ این ای ٹی میں آپ کو دیئے گئے سوالات زیادہ تر نصابی کتب سے ہوں گے  لیکن اقدار میں ایک معمولی تبدیلی کے ساتھ، جبکہ سوالات اس انداز میں پوچھے جاتے ہیں جو طالب علم کی اہلیت اور اس مضمون کے بارے میں سمجھنے کی جانچ پڑتال کرتا ہے۔ کچھ طلبا اس موقع پر مخمصے میں پڑ جاتے ہیں اور نمبر کھو دیتے ہیں۔

امتحان میں اچھی کارکردگی کا مظاہرہ کرنے کے لیے آپ کو اچھی طرح سے مشق کرنے کی ضرورت ہے۔ مزید اہم بات یہ ہے کہ نویں، دسویں اور ایف ایس سی کی ریاضی کی درسی کتب سے لوگارتھم اور نظریات کی خصوصیات کو جانیں۔ اس بات کو یقینی بنائیں کہ آپ جانتے ہیں کہ آپ فارمولوں کو صحیح طریقے سے لاگو کر رہے ہیں۔ مزید یہ کہ انضمام اور تفریق کے حصے اور خطوط کا باب چوتھا باب لکیروں اور ان کی مساوات سے متعلق ہے۔

 اپنی کیمسٹری سیکھیں، آرگینیک پر توجہ دیں:

 نیٹ کے کیمسٹری سیکشن میں 30 ایم سی کیوز ہیں، جن کی کوشش کرنا نسبتاً آسان ہے۔ اگر آپ کو اس حصے کی کوشش کرنے کے لیے اس مضمون کی بنیادی تفہیم اور اس پر اچھی گرفت ہو تو کامیابی میں بہت مدد ملے گی۔

ہمارا مشورہ ہے کہ آپ بنیادی تصورات، فارمولوں اور ان کے اطلاق پر نظر ثانی کریں اور ایسا کرنے سے آپ اس حصے میں عمدہ کارکردگی کا مظاہرہ کرسکتے ہیں۔ نامیاتی کیمسٹری حصے سے کچھ سوالات مشکل اور پریشان کُن ہوسکتے ہیں۔ اس طرح یہ امتحان دینے والے ہر طالب علم کو گھبرائے بغیر اس کو دھیان میں رکھنا چاہیے۔ تاہم غیر تصوراتی کیمسٹری سیکشن کو تصورات اور بنیادی باتوں کو اچھی طرح یاد کرکے کور کیا جاسکتا ہے۔

 انگلش:

یہ 20 ایم سی کیوز کا پرچہ ہے لیکن اس حصے کو نظرانداز نہ کریں کیونکہ یہ آپ کے لیے کامیابی کا اہم مرحلہ ثابت ہوسکتا ہے۔ امتحان کے اس حصے میں آپ کو اپنی لغت پر آزمایا جائے گا، لہٰذا ہم تجویز کرتے ہیں کہ آپ آج ہی اس کی تعمیر شروع کردیں کیوں کہ آپ اسے راتوں رات نہیں سیکھ سکتے ہیں اس لیے اپ کو اسے تھوڑا زیادہ وقت دینا پڑے گا۔ کچھ سوالات آپ کی گرائمر کا بھی جائزہ لیں گے، لہٰذا اس کو نظرانداز نہ کریں۔ انگریزی سیکشن کے لیے مشق کرنے کے لیے آپ ایس اے ٹی انگلش اور مسٹر چپس کو بھی چیک کرسکتے ہیں۔ یہ نہیں بھولنا چاہیے کہ ہر سیکشن اہم ہے۔

آئی کیو کامیابی کی کلید ہے۔

اس حصے میں آپ کی عقل مندی، ہوشیاری اور ذہانت کی جانچ کی جاتی ہے۔ ہم تجویز کرتے ہیں کہ آپ آج سے ہی اپنے آئی کیو یعنی ذہانت اور عقل مندی پر کام کرنا شروع کریں۔ اپنے آئی کیو کو بہتر بنانے کے لیے آپ آن لائن ویب سائٹس سے مدد لے سکتے ہیں جبکہ دیگر وسائل کا بھی ایک پول ہے جو اپ کے لیے انتہائی مددگار ثابت ہوسکتا ہے۔ تو کیوں نہ آج سے ہی اس کی مشق شروع کردی جائے؟

 تاہم آپ کو یہ ذہن میں رکھنا ہوگا کہ آپ کس پروگرام کے لیے درخواست دے رہے ہیں۔انجینئرنگ پروگرامز کو سب سے زیادہ ریاضی اور فزکس یعنی طبیعات کے حصے میں مہارت کی ضرورت ہے کیونکہ زیادہ تر پرچوں کا بڑا حصہ انہی دو مضامین پر مشتمل ہوتا ہے۔

حیاتیاتی سائنس (بائیولوجیکل سائنس) کے پروگرامز میں حیاتیات اور کیمسٹری سے متعلق مزید سوالات دیئے جاتے ہیں۔

ماہرین کا مشورہ ہے کہ اگر آپ ہر روز مشق کریں تو این ای ٹی کی تیاری کے لیے دو ماہ کا وقت بھی کافی ہے۔ ہم آپ کے امتحان میں کامیابی کے لیے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہیں۔

تمام مواد کے جملہ حقوق محفوظ ہیں ©️ 2021 کیمپس گرو

کیا آپ کے ذہن میں کوئی سوال ہے
ڈسکس کریں

× کلک کریں